کیسے کاٹوں رتیاں صابر

منقبت
حضور پر نور سیدنا علا ء الملت والدین علی احمد صابر کلیری رضی اللہ تعالیٰ عنہ
کیسے کاٹوں رتیاں صابر
تارے گنت ہوں سیّاں صابر

مورے کر جوا ہوک اٹھت ہے
موکو لگالے چھتیاں صابر

توری صورتیا پیاری پیاری
اچھی اچھی بتیاں صابر

چیری کو اپنے چرنوں لگالے
میں پروں تورے پیّاں صابر

ڈولے نیّا موری بھنور میں
بلما پکڑے بیّاں صابر

چھتیاں لاگن کیسے کہوں میں
تم ہو اونچے اٹریاں صابر

تورے دوارے سیس نواؤں
تیری لے لوں بلیّاں صابر

سپنے ہی میں درشن دکھلادو
موکو مورے گسیّاں صابر

تن، من، دھن سب تو پہ وارے
نورؔی مورے سیّاں صابر

سامانِ بخشش

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.