اللہ میرا دہر میں اعلیٰ مقام ہو

اللہ میرا دہر میں اعلیٰ مقام ہو

 

اللہ میرا دہر میں اعلیٰ مقام ہو
سرکار کے غلاموں میں میرا بھی نام ہو

مرنے سے پہلے دیکھ لوں صبحِ دیارِ پاک

سرکار حاضری کا کوئی انتظام ہو

سانسیں مہکتی ہو دم آخر گلاب سے

دردِ زبان حضورِ گرامی کا نام ہو

جس وقت میری روح جسد چھوڑنے لگے

آنکھوں کے سامنے میرے ماہِ تمام ہو

اِس مشت خاک کی ہو سبھی حسرت تمام

محبوب کی گلی میں جو قصہ تمام ہو

نس نس میں نشہ ایسا سما جائے نعت کا

سرکار لب پہ نعت میرے صبح و شام ہو

سیراب تا حیات ہوں میں تشنگئ عشق

خدام مصطفیٰ میں اُجاگر کلام ہو

%d bloggers like this: