اللہ اللہ شہ قونین جلالت تیری

اللہ اللہ شہ قونین جلالت تیری

اللہ اللہ شہ قونین جلالت تیری
فرش کیا عرش پے جاری ہے حکومت تیری

جولیا کھول کے بے سمجھے نہیں دوڑ آئے
ہمیں معلوم ہے دولت تیری عادت تیری

اللہ اللہ شہ قونین جلالت تیری

کے واہ کیا جودو کرم ہے شاہ بطحا تیرا
کے نہیں سنتا ہی نہیں مانگنے والا تیرا

اللہ اللہ شہ قونین جلالت تیری

تُو ہی ہے مُلک خُدا مِلک خُدا کا مالک
راج تیرا ہے زمانے میں حکومت تیری

اللہ اللہ شاہ قونین جلالت تیری

مجمع حشر میں گابھرائی ہوئی پھرتی ہے
ڈھونڈھنے نکلی ہے مجرم کو شفاعت تیری

اللہ اللہ شہ قونین جلالت تیری

چین پائینگے تڑپتے ہووے دل محشر میں
غم کسے یاد رہے دیکھ کے صورت تیری

اللہ اللہ شہ قونین جلالت تیری

دیکھنے والے کہا کرتے ہیں اللہ اللہ
کے یاد آتا ہے خُدا دیکھ کے صورت تیری

اللہ اللہ شہ قونین جلالت تیری

ہم نے مانا کے گُناہوں کی نہیں حد لیکن
تُو ہے اُنکا تو حسن تیری ہے جنت تیری

%d bloggers like this: